Urdu Chronicle

Urdu Chronicle

پاکستان

لاہور میں آج سے 11 مویشی منڈیاں قائم، شہر کی صفائی اور سکیورٹی کے انتظامات مکمل

Published

on

 

عیدالاضحیٰ قریب آتے ہی صوبائی دارالحکومت میں (آج) اتوار سے 11 مویشی منڈیاں عوام کے لیے قربانی کے جانور خریدنے کے لیے کھول دی جائیں گی جب کہ شہری اداروں نے تہوار کے دنوں میں شہر کو صاف ستھرا رکھنے کے لیے اپنے پلان کو حتمی شکل دے دی ہے۔

کلائمیٹ ڈیٹا پروسیسنگ سینٹر کے مطابق پاکستان میں ذوالحج کا چاند 19 جون کو نظر آنے کا امکان ہے اور عیدالاضحیٰ 29 جون (جمعرات) کو ہو سکتی ہے۔ ذوالحج کا چاند دیکھنے کے لیے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس 19 جون کو کراچی میں محکمہ موسمیات کے دفتر میں مولانا عبدالخبیر آزاد کی زیر صدارت ہوگا۔

قربانی کے جانوروں کی فروخت شروع کرنے کے لیے لاہور انتظامیہ 10 عارضی سیلز پوائنٹس اور ایک مستقل منڈی (شاہ پور کانجراں) قائم کرے گی۔ عارضی مویشی منڈیاں بغیر نفع نقصان کی بنیاد پر قائم کی جائیں گی۔ مزید یہ کہ انتظامیہ نے فیصلہ کیا کہ اس سال سگیاں میں مویشی منڈی کو سگیاں کے قریب منتقل کیا جائے گا۔

قربانی کے جانوروں کے لیے جن سیل پوائنٹس کی نشاندہی کی گئی ہے، ان میں نشتر زون میں ایل ڈی اے سٹی (کاہنہ کچہ پر سدھار ولیج کے قریب، ڈیفنس روڈ پر)، ایل ڈی اے ایونیو ون (رائے ونڈ روڈ پر) اور پائن ایونیو روڈ، علامہ اقبال زون میں دو عارضی منڈیاں قائم کی جائیں گی۔ این ایف سی سوسائٹی میں اقبال زون (بحریہ ٹاؤن کے قریب) اور رائے ونڈ (حویلی مرکز کے قریب، سندر روڈ پر نثار سپرنگ ملز کے سامنے) اور ترکی روڈ پر ایک ایک سیلنگ پوائنٹ، لکھوڈیر (واہگہ زون) میں LWMC ڈمپنگ پوائنٹ کے قریب، آئی ٹی یونیورسٹی کے لیے سائٹ (مین کیمپس) برکی روڈ پر، نزد پیراگون سوسائٹی (عزیز بھٹی زون)، فقیر محمد ڈاگیا روڈ، نزد ایس این جی پی ایل آفس (راوی زون)، حضرت عثمان غنی روڈ، سگیاں روڈ (داتا گنج بخش زون کے قریب) اور اڈہ میں اسپورٹس کمپلیکس۔ رکھ چھبیل، نزد منوان ہسپتال (شالیمار زون)۔

اس سلسلے میں کمشنر لاہور محمد علی رندھاوا نے ہفتہ کو ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے لاہور ڈویژن میں عارضی مویشی منڈیوں کے انتظامات کا جائزہ لیا۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ عیدالاضحی کے موقع پر قربانی کے جانوروں کی خریدوفروخت کے لیے قصور میں چھ، شیخوپورہ میں 9، ننکانہ میں چھ اور لاہور میں 11 مویشی منڈیاں لگائی جا رہی ہیں۔ لاہور کی شاہ پور کانجراں منڈی سمیت کل 11 مویشی منڈیاں آج سے کام کریں گی۔

لاہور میں کچرا اٹھانے کے لیے 106 کلیکشن پوائنٹس بنائے جائیں گے جبکہ پولیس نے عارضی مویشی منڈیوں کی سیکیورٹی کے لیے سیکیورٹی پلان اور ڈیوٹی روسٹر تیار کر لیا ہے۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کمشنر نے کہا کہ لاہور کی عارضی مویشی منڈیوں میں کوئی ٹیکس یا فیس نہیں لی جائے گی۔ انہوں نے اعلیٰ حکام کو ہدایت کی کہ عید کی چھٹیوں میں صاف لاہور کے لیے فیلڈ میں موجود رہیں۔ انہوں نے کہا کہ لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی (LWMC) صفائی آپریشن  عید کے پہلے تین روز تک جاری رہے گا۔ چوتھے دن، صفر ویسٹ آپریشن ہوگا۔

 

دریں اثنا، واٹر اینڈ سینی ٹیشن اتھارٹی (واسا) لاہور نے عیدالاضحیٰ کے لیے ایس او پیز کو حتمی شکل دے دی۔ تمام ٹاؤنز کے واسا آپریشن اینڈ مینٹیننس ڈائریکٹرز کو عید کی تعطیلات کے دوران پانی کی فراہمی اور سیوریج اور نکاسی آب کے نظام کو یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

 

منیجنگ ڈائریکٹر واسا غفران احمد نے ڈائریکٹرز کو ہدایت کی کہ وہ اپنے علاقوں کا معائنہ کریں اور کھلے یا ٹوٹے مین ہولز اور پانی کے اوور فلو کے مسائل کو فوری طور پر حل کریں۔ انہوں نے فیلڈ افسران سے کہا کہ وہ متحرک رہیں اور پوری طرح متحرک رہیں جبکہ تمام نالوں کو شیڈول کے مطابق صاف کیا جائے۔ انہوں نے انہیں تمام مویشی منڈیوں میں پینے کے پانی کے ٹینکرز تعینات کرنے کی بھی ہدایت کی جبکہ تمام آپریشنل سٹاف عید کی چھٹیوں میں تین شفٹوں میں 24 گھنٹے ڈیوٹی پر موجود رہے

واسا لاہور نے نالیوں میں جانوروں کا فضلہ کم سے کم کرنے کے لیے عوامی آگاہی مہم چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔

علاوہ ازیں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے ایل ڈبلیو ایم سی کے سی ای او بابر صاحب دین نے کہا کہ عیدالاضحیٰ سے قبل ایک ہزار کے قریب نئے کنٹینرز فیلڈ میں رکھے جا رہے ہیں اور شہر بھر میں ٹرک آرٹ ونگ سے مزین مزید 200 کچرے کے ڈبے لگائے گئے ہیں۔ انہوں نے اعلیٰ حکام کو عید کی تعطیلات کے دوران شہر کو صاف ستھرا رکھنے کے لیے تیار رہنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ عیدالاضحیٰ کے موقع پر صفائی کی بہترین سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے تمام انتظامات مکمل کیے جا رہے ہیں۔

حماد سعید 14 برس سے شعبہ صحافت سے منسلک ہیں، مختلف اخبارات اور ٹی وی چینلز کے ساتھ کام کیا، اب اردو کرانیکل کے لاہور میں نمائندہ خصوصی ہیں، کرائم، کورٹس اور سیاسی امور کے علاوہ ایل ڈی اے، پی ایچ اے، واسا، کسٹمز، ایل ڈبلیو ایم سی کے محکموں کی رپورٹنگ کرتے ہیں۔

Continue Reading
Click to comment

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

مقبول ترین