پاکستان

شارق جمال قتل کیس، مقتول کے ساتھ ڈیوٹی پر تعینات رہنے والا کانسٹیبل گرفتار

Published

on

ڈی آئی جی شارق جمال کی پراسرار موت کی تفتیش کے دوران پولیس نے متوفی کیساتھ تعینات پولیس ملازم کو حراست میں لے لیا۔ اہل خانہ  کا کہنا ہے کہ  صغیر نامی پولیس ملازم شارق جمال کیساتھ تعینات تھا ۔ صغیر احمد کو پولیس نے عبوری ضمانت پر ہونے کے باوجود حراست میں لیا۔

صغیر احمد کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ پولیس اس کیس میں صغیر احمد کو پھنسانے کی کوشش کررہی ہے،مقدمہ میں نامزد دیگر ملزمان اثرورسوخ رکھنے کی وجہ سے تاحال پولیس کی پہنچ سے دور ہیں،وزیر اعلی پنجاب واقعہ کا نوٹس لیں اور صغیر احمد کو پولیس کی تحویل سے بازیاب کروائیں۔

ڈی آئی جی شارق جمال 22 جولائی کو ڈیفنس کے ایک فلیٹ میں مردہ پائے گئے تھے۔تین ماہ کے بعد واقعہ کا مقدمہ سات نامزد ملزمان کیخلاف درج ہوا ۔

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

مقبول ترین

Exit mobile version