Urdu Chronicle

Urdu Chronicle

پاکستان

القادر ٹرسٹ کیس، عمران خان شامل تفتیش، سوالنامہ دے دیا گیا، ذاتی معالج، وکلا سے ملنے، اہلیہ سے بات کرنے کی اجازت

Published

on

قومی احتساب بیورو (نیب) نے تحریک انصاف کے گرفتار چیئرمین عمران خان کو القادر ٹرسٹ میں شامل تفتیش کرتے ہوئے سوالنامہ دے دیا جبکہ عمران خان کے ریمانڈ کے تحریری حکمنامے میں انہیں ذاتی معالج اور وکلا سے ملاقات، اہلیہ سے بات کرنے کی بھی اجازت دی گئی ہے۔

نیب نے عمران خان کو القادر ٹرسٹ کیس میں شامل تفتیش کرتے ہوئے سوالنامہ دے دیا ہے۔ عمران خان سے پوچھا گیا ہے کہ

دسمبر 2019ء میں برطانیہ سے غیرقانونی رقم کی واپسی کی منظوری کے لیے سمری کیوں تیار کروائی ؟ دسمبر 2019ء میں برطانیہ سے غیرقانونی رقم کی واپسی کو سرنڈر کرنے کی منظوری کیوں دی ؟ ملزمان سے بدلے میں القادر یونیورسٹی کی زمین اور دیگر مالی فائدے کیوں لیے ؟۔

نیب کے سوالنامے میں عمران خان سے یہ بھی پوچھا گیا ہے کہ اعلیٰ ترین عوامی عہدے پر بیٹھ کر اختیارات کا ناجائز استعمال کیوں کیا ؟ اختیارات کا ناجائز استعمال کرکے ملزموں سے مالی فائدے کیوں حاصل کیے ؟ برطانیہ سے غیر قانونی رقم ملزمان کو واپس کرکے مجرمانہ عمل کیوں کیا؟برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی سے خط و کتابت  کو خفیہ کیوں رکھا گیا ؟۔

نیب نے یہ بھی پوچھا ہے کہ اثاثہ جات ریکوری یونٹ کی سمری کو خفیہ کیوں رکھا گیا ؟۔

عمران خان کا جسمانی ریمانڈ دینے والی عدالت نے تحریری حکم نامہ جاری کیا ہے جس میں عمران خان کو ذاتی معالج سے ملاقات کی اجازت دی گئی ہے،عمران خان کا طبی معائنہ کرنیوالی ٹیم میں ڈاکٹر فیصل کو بھی شامل کرنے کا حکم بھی دیا گیا ہے۔

عدالت نے دوران ریمانڈ عمران خان کو اپنی اہلیہ سے بات کرنے کی بھی اجازت دی ہے اور یہ بھی کہا ہے کہ دوران ریمانڈ عمران خان کے وکلاء ملاقات کرنا چاہیں تو اس کی اجازت ہوگی

Continue Reading
Click to comment

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

مقبول ترین